( سیاہ سی ڈرامہ 2013)

کل مورخہ 16 فروری 2013 بروز ہفتہ ایکبار پھر متحدہ   (MQM) ، پے پالز (paypals) پارٹی (PPP) سے غیر متحد ہوگئی۔

ہم نے کہا (دل میں بھئ۔ ) چلو اچھا ہوا حکومت چھننے سے پہلے (1 ماہ پہلے ہی سہی؛ آپ لوگ تو پیچھے ہی پڑ جاتے ہو)  ہی حکومت چھوڑ دی گئی۔ شاید اب بجلی کے بل کم آنے ،  گیس اور سی  این جی کی لوڈشیڈنگ سے نجات کا وقت شروع  ہونے والا ہے!!!  جناب، ترجمان نے کنفرم کیا ہے کہ یہ فیصلہ اٹل ہے۔( اب ہر بار منگو کو الّو تھوڑا بنائیں گے) ۔

فوراً اپنے عزیز دوست عبداللہ سے تبادلہِ خیال کرنے انکے گھر پہنچے ؛ ہمیشہ کی طرح  ہمارے خیالات اور آدھی ادھوری  خوشیوں  کے ارمانوں پر اوس ڈالتے ہوئے وہ  یوں گویا ہوئے:

یہ 2013 کی الیکشن کی اوپننگ سیریمنی (Opening Ceremony) ہے؛ الیکشن کیمیشن کے مطابق نگراں سیٹ اپ ؛ حکومت اور حزبِ اختلاف کی رضامندی سے بنے گا اور جب تک  ایم کیو ایم ، پی پی پی  سے غیر متحد ہو کر  حزبِ اختلاف میں نہیں جائے گی اس وقت تک مسٹر ذورداری کے حسبِ  منشاء  نگراں حکومت کیسے آئے گی؟؟؟

ہم یہ سوچتے ہوئے اپنا سامنہ  لے کر واپس آگئے (تو کیا آپ جیسا منہ لے کر آتے): کہ

پاکستانی منگو کو اگلے پانچ سالوں کی لئے پھر سے پرانے پانچ سال مبارک ہوں۔۔۔

شکریہ: تبصرے میں خوب دل کی بھڑاس نکالیں !

 (از:منگو)

(مورخہ: 17 فروری 2013 شام 6:31)


2 Responses to “( سیاہ سی ڈرامہ 2013)”
کاشف نصیر Posted on February 17, 2013 at 5:38 pm

حافظ حسین احمد صاحب کہتے نے ایم کیو ایم کی علیحدگی پر بڑا خوبصورت تبصرہ کیا ہے، کہتے ہیں کہ پی پی پی اور ایم کیو ایم میں طلاق بائن یا طلاق رجعی نہیں طلاق انتخابی ہوئی ہے۔ بس اب انتخابی ڈرامے شروع ہوچکے ہیں اور یہ اسکا ٹریلر تھا، ڈرامہ ابھی باقی ہے :-)

mungoo Posted on February 18, 2013 at 10:40 am

بالکل میں آپ سے متفق ہوں کاشف بھائی۔

Post a Comment

Englishاردو

EnglishUrdu